حلقہ رشتہ درا ں سے حلقہ یا را ں تک   


کو شائع کی گئی۔ July 2, 2019    ·(TOTAL VIEWS 92)      No Comments

تحر یر ۔۔ ڈا کٹر عبد ا لمجید چو ہد ری
صو بہ پنجا ب میں ایک سا ل تک عشر و ز کو ة کی بند ش کے بعد تبد یلی سر کا ر کا ا نقلا بی ا قد ا م سا بقہ مستحقین ز کو ة کی فہر ستیں منسو خ کر کے پی ٹی آ ئی ا ر کا ن کی خو ا ہش پر نئی فہر ستیں مر تب کی جا ر ہی ہیں یا د ر ہے قو می ا لیکشن سے قبل ہی مستحقین کو ا یک ہزر رو پے ہر ما ہ د ینے کا سلسلہ ر و ک دیا گیا تھا جو کہ قو می اور صو با ئی حکو مت بننے کے بعد بھی بحا ل نہ ہو سکا تھا جسکی وجہ سے مستحقین پر یشا ن تھے اب ان مستحقین کو چھو ڑ کر نئی فہر ستیں بنا ئی جا ر ہی ہیں اس بے لگا م مہنگا ئی میں ا یساکر نا غر یب عو ا م کے سا تھ کسی مذاق سے کم نہیں اس لئے ا س فیصلے پر نظر ثا نی کی جا ئے مہنگا ئی کا جن بو تل سے با ہر آ گیا ہے اور بے قا بو بھی ہے آئی ایم ا یف کی رپو ر ٹ کے مطا بق 2020 ءتک و طن عز یز مہنگا ئی کی شر ح میں ہو شرو با ا ضا فہ ہو گاا یسی صو ر ت حا ل میں عو ا م کے غم و غصہ میں ا ضا فہ ہو نا کو ئی ا نو کھی با ت نہیں عمر ا ن خا ن نے عو ا م کو جو خو ا ب د کھلا ئے ا گر وہ پو ر ے نہیں ہو تے تو یہی عو ا م کا غصہ آتش فشا ں کی طر ح پھٹ جا ئے گا اور ا ب تک عمر ا ن خا ن کے د کھلا ئے ہو ئے خو ا ب پو ر ے ہو تے ہو ئے نظر نہیں آ ر ہے جس سے عو ا م میں ما یو سی اور بد د لی پھیل ر ہی ہے ا پو ز یشن اسی مو ا قع کی تلا ش میں نظر آ تی ہے آٹھ ما ہ کے بعد تک عمر ا ن خا ن کی حکو مت نے غر یب عو ا م کو مہنگا ئی کے سو نا می کے علا وہ اور ا ہم با پر ا نے بھا شن کے علا وہ کیچھ نہیں دیا ہے عمر ا ن خا ن غر یب عو ا م آ پ سے ا ن خو ا بو ں کی و جہ سے جو آ پ نے عو ا م کو د کھلا ئے تھے بہت سی ا مید یں ر کھتی ہے وز یر ا عظم صا حب سا بقہ دورحکو مت میں بل آ پ جلار ہے تھے اور آ ج ا پنے دور ے حکو مت میں عو ا م کا تیل نکل ر ہا ہے عو ا م نے آ پ کو وو ٹ ا س لئے نہیں دیا تھا و ز یر ا عظم صا حب لو گو ں کے کا ر و با ر ٹھپ ہو رہے ہیں ا دو یا ت کی قیمت سبھی بڑ ھ گئی ہیںعوا م جا ئیں تو کد ھر جا ئیں چو ر چو ر کا بھا شن ریا ست مد ینہ کی تسلی یہ کب تک میں کسی کو ا ن آر او نہیں دوں گا اس سے عو ا م کو کیا فا ئد ہ عو ا م کو ریلف چا ہیے جو کہ ا ب تک ا ن سے دو ر ہے تیر ا پا کستا ن ہے نہ میر ا پا کستا ن ہے صر ف آ ئی ا یم ا یف کا پا کستا ن عو ا م بر ا حا ل کر دیا ہے ملک تجر بو ں کا متحمل نہیں لا کھو ں لو گو ں کو بے رو ز گا ر کر د یا گیا ا گر بے رو ز گا ر ی پہ تو جہ نہ د ی گئی تو جر ئم میں ا ضا فہ ہو گا عو ا م تما م سیا سی جما عتو ں سے تنگ ہین و ہ با ہر آ ئے گے ر ہنما ا یم کیو ا یم فا ر و ق ستا ر پی ٹی آ ئی ا پو ز یشن میں کیچھ ا س طر ح کے نعر ے لگا تی تھی نا ا ہل حکمر ا نو ں غر یب عو ا م کا خو ن نچو ڑ نا بند کر و نا ا ہل حکمر ا نو ں آ ئی ا یم ا یف سے ڈ کٹیشن لینا بند کر و نا ا ہل حکمر ا نو ں ا پنی نا کا میو ں نا ا ہلیو ں کی سزا غر یب عو ا م کو مت د و عوام کو گھبر انا نہیں چا ہیے کہ ڈا لر ا و پر جا رہا ہے و یسے بھی ہر ا ک کو اوپر ہی تو جا نا ہے ا سی لئے سا بقہ ہو ں یا نئے پا کستا ن وا لے سبھی کا ا یک ہی نعر ہ ہے غر یب کو ئی نہیں ر ہنے د ینا غر یب ختم کر و مہم ز و ر شو ر سے جا ر ی ہے یہا ں با ت یا د آ گئی کسی نے کیا خو ب کہا ہے کہ ر مضا ن میں جو کیچھ بھی بنتا ہے ، سب مز ے لے کے کھا تے ہیں ۔۔۔۔ پا کستا ن بھی ر مضا ن میں بنا تھا ہو نا تو یہ چا ہیے کہ و ز یر ا عظم سمیت تما م ا را کین اور مشیر تما م مر ا عا ت لینا بند کر یں کیو نکہ ملک معا شی بحر ا ن کا شکا ر ہے اور پر و ٹو کو ل و ہی جس پہ محتر م وز یر ا عظم صا حب با ت کیا کر تے تھے ا گر آ ج کے حکمر ا ن بھی و ہی سب کر ر ہے ہیں تو پھر ٹھیک کو ن کر ے گا عیا شیا ں حکمر ا ن کر یںاور قر با نی ہمیشہ عا م لو گ عو ا م دیں عو ا م کو ا س سے کیا غر ض کہ کس نے کیا کیا اور کیا نہیں کیا کس کو سز ا ملی یانہیں ملی عو ا م کو ا پنے پیٹ کی فکر ہے جس کو بھر نا اس کے لئے مشکل ہو ر ہا ہے ا بھی تک حکو مت عا م آ د می کو ر یلیف د ینے میں نا کا م نظر آ تی ہے اور ا پنی نا کا می کا بو جھ حسب سا بقہ دو سر و ں پہ ڈ ا لتی د یکھا ئی د ے ر ہی ہے سنا ہے سا د گی کی بہت سی با تیں ہیں حکمر ا نو ں کی صر ف 19لا کھ کا طو طو ں کا پنجر اور ان کے بعد مٹکو ں اور مو ر کے پنکھ کے ٹیند ر یہ ہے تبد یلی غر یب عو ا م کے عیا ش حکمر ا ن لگتا ہے عو ا م کے لئے کو ئی دور دور تک عا فیت کی سبیل نظر نہیں آ تی حکو مت تو پی ٹی آ ئی کی ہے لیکن کتنے د یر ینہ پی ٹی آ ئی کے کا ر کن ہیں جنہیں حکو مت میں عہد ے اور وزا ر تیں ملیں ۔۔۔؟ ملک میں عا م آد می کے حا لا ت بہت خر ا ب ہیں اور یہ حا لا ت اور تکلیف ا نسا ن کی ا نسا ن کے لئے پید ا کر دا ہے مو جو د ہ حکو مت ہو یا سا بقہ حکو مت تبد یلی ا س و قت تک ممکن ہی نہیں جب تک ہم عو ا م ا پنا قبلہ در ست نہیں کر تی ا گر ہم عو ا م ٹھیک ہو ئے تو ہم کو یقین ہو نا چا ہیئے کہ حکمر ا ن ہما ر ے لئے با عث ر حمت ہو گا ہما ر ی مو جو د ہ حکمرا ن کو تو شا ید ا بھی تک ا س با ت کا یقین ہی نہیں ہو رہا کہ و ہ ا یک ر یا ست کے با قا عد ہ حا کم ہے ا سی لئے ا ن کے ز یا دہ فیصلے یو ٹر ن کا شکا ر ہیں ا گر ا ن کے حلقہ یا ر ا ں یعنی کہ ا ن کے د ست را ست ان کے وزاءکی با ت کی جا ئے تو و ہ ا ن کی رہنما ئی کی بجا ئے ا ن کی قصید ہ گو ئی میں مصر و ف ہیں تا ر یخ گو ا ہ ہے کہ بڑ ی بڑ ی سلطنتو ں کی بر با د ی کی و جہ ا ن کے و ز یر اور مشیر بنے سا بقہ حکمر ا ں کے د ست را ست حلقہ ر شتہ دارں تھے تو تبد یلی کا دعو ہٰ کرنے وا لے بھی ا ن سے بڑ کر حلقہ یا ر ا ں کے سا تھ کے ہم عو ا م پہ حکمر ا ں ہیں ۔

Readers Comments (0)




Premium WordPress Themes

WordPress主题