سیا سی سا ئنس اورا لیک ٹیبل   


کو شائع کی گئی۔ July 7, 2018    ·(TOTAL VIEWS 91)      No Comments

تحر یر ۔ ۔۔ڈ ا کٹر عبد ا لمجیدچو ہد ر ی 

انتخا بات کے لئے مید ا ن تیا ر ہو چکا ہے قومی اور صوبا ئی ا سمبلیو ں کے لئے ا مید ورا ن کا چنا ؤ ہو چکا ا گر ا امیدواروں کو د یکھے تو آپ کو و ہی صا حب ثر و ت اور پر ا نے نا م دو لت مند ا لیکٹبیلزلو گ ہی نئے د ل فر یب نعر و ں کے سا تھ مید ا ن میں نظر آ ئیں گے تبد یلی اور نئے پا کستا ن کے نعر ہ پر قر با نی د ینے والے فعا ل کا ر کنو ں کو سو ا ئے خجا لت اور ما یو سی کے کیچھ ہا تھ نہ آ یا ان کا ر کنو ں کے مقا بلہ میں مو سمی پر ند ے رو ا یتی سیا سی لو گ با ز ی لے گئے اس طر ح ا یک با ت تو ثا بت ہو گئی کہ کسی جما عت کا کو ئی ٹھو س قا بل عمل پرر و گر ا م اور منشو ر نہیں ٹکٹو ں کے مسئلے پر پا کستا ن کی تما م بڑ ی جما عتو ں کے کا ر کنو ں کو ا حتجا ج کر تے د یکھا گیا او ر ا س ا لیکشن میں حسب سا بق سے بھی بڑ ھ کر آپ کو حیر ا نی ہو گی کہ ر وا یتی سیا ست دا ن ا لیکٹبیلزنے تبد یلی اور نظر یا ت کو ہا را دیا ۔سنا تو تھا کسی قو م کے لئے نظر یے کی حیثیت ر و ح کی سی ہو تی ہے جو ا س کی منز ل کا تعین کر تی ہے اور جس سے ا س کی قو ت عمل میں ا ضا فہ ہو جا تا ہے گو یا یہ ا یک ا یسا محر ک ہے جس کے بغیر قو میں قو ت فکر و عمل سے محر و م ہو جا تی ہیں اور ا ن میں نشو و ار تقا ء کی صلا حتیں نا پید ہو جا تی ہیں لیکن جب کو ئی قو م کسی نظریے کو لے کر نکلتی ہے تو وہ د نیا کو نئے ا نقلا با ت سے رو شنا س کر ا تی ہے اور ا یک نئی تہذ یب کی بنیا د ر کھتی ہے ا ب آ پ ا گر ہما ر ی جما عتو ں کے نظر یا ت کی با ت کی جا ئے تو یقین کا مل ہونا چا ہیے ہو ا کا رخ ا ور مو سمی حا لا ت کا ا درا ک کر تے ہو ئے ہما ر ے پیا ر ے ر وا یتی سیا ست دا ن مو سمی پر ند ے تخت ا قتد ار کے لئے کسی بھی جما عت کی طر ف سے کی گئی پیشکش پر ا پنی وفا دا ی تبد یل کر تے ہو ئے کو ئی شر مند گی محسو س نہیں کر تے جن کی تعر یفو ں کے پل بند ھے جا تے تھے ا ب و ہ ہی لو گ ا ن کے ز یر ے عتا ب ہو تے ہیں اور یہ سیا سی سا ئنس دا نو ں کے بغیر لیلا ئے ا قتد ا ر کا حصو ل مشکل نظر آ تا ہے ہما ر ے سیا ستد ا ن ہو س ا قتدار کے اس قدر ر سیا ہو چکے ہیں کہ ا ا پنے مفا د کی خا طر نظر یا ت پا ر ٹی منشو ر کو داؤ پر لگ دینا ا ن کے لئے معمو لی با ت ہے ا ن کے پیش نظر عو ا م کے ا قتصا د ی اور معا شی مسا ئل ، معا شر تی اور سما جی میلا نا ت کی کو ئی ا ہمیت اور حیثیت نہیں اگر کیچھ ا ہمیت اور حیثیت ہے تو وہ لیلا ئے ا قتد ا ر پا ر ٹی کو ئی بھی ہو نظر یا ت مخا لف ہو ں ا ختلا ف لا کھ ہو ں ر ا ستے نکل آ تے ہیں کا ش کہ ہما ر ے یہ رو ا یتی اور نظر یا تی سیا ست دا ن قو می مفا د میں بھی ا کھٹے ہو جا ئیں ا گر عو ا می مفا د کو د یکھ جا ئے تو عو ا م کے و وٹ سے ا قتد ا ر کے مز ے لینے و ا لے عو ا می نما ئند ے آ پ کو خو ش بخت نظر آ تے ہیں ا گر ذا تی مفا د ہو تو و ہی لو گ جو ایک د و سرے کو غیرمہذب و نا منا سب ا لقا با ت سے نو ا زنا فر ض سمجھتے ہیں آ پس میں شیرو شکرنظر آ ئیں گے اس ا لیکشن کو یہ منفر ا عز ا ز بھی حا صل ہے کہ د ن کو کو ئی اور پا ر ٹی کا ٹکٹ اور را ت کسی اور پا ر ٹی کا ٹکٹ آج ا یک پا ر ٹی کے فلیکس لگا ئے جا ر ہے ہیں تو تھو ڑ ے د نو ں بعد وہ ا تا ر ے جا ر ہے ہیں پتہ چلتا کہ پا ر ٹی نے ٹکٹ کسی اور کو د ے دیا پا ر ٹی نظریے سے ا قتدا ر کے لئے نظر یے ضر و ر ت کی ز یا دہ ضر و ر ت ہے ا س ا لیکشن میں ا نتخا بی نشا ن جیپ کو بھی خا ص ا ہمیت حا صل ہو تی جا ر ہی ہے تقر یبا تما م پا ر ٹی و ا لے کسی نہ کسی بزر گ کے مزار پہ حا ضر ی د یتے نظر آئے کا ش ا ن بزر گو ں کی تعلیما ت کی رو شنی میں عو ا م کے نما ئند ے عو ا م کے خا د م بن کے ا ن کی خد مت کر یں تو و طن عز یز جنت نظیر ہو خا ص با ت سے یا د آ یا ا س مر تبہ تو عو ا م کو بھی ز با ن مل گئی ہے سر دا رو ں اور و ڈیر و ں کے آ گے ا پنے حقو ق اور حق کے لئے بولنے لگے اس سے پتہ چلتا ہے کہ عو ا م میں شعو ر آ رہا ہے ا ب د یکھنا ہے عو ا م کو صا ف پا نی ملے گا و ڈیر ے غریب کے بچے کو سکو ل جا نے د ینگے جس مقصد کے لئے پا کستا ن بنا تھا کہ غر یب اور ظلم کے ستا ئے ہو ئے مسلما ن سکھ کی ز ند گی بسر کر سکیں لیکن غر یب عو ا م ا پنے ہی و طن میں مہنگا ئی کے ہا تھو ں قتل ہو ر ہے ہیں ۔گز ا ر ش ہے ا پنے مطا لبا ت کی با ت کر نی چا ہیے عمر ا ن ، بلا و ل اور مر یم ہما ر ے ملک کے نما ئند ے ہیں ہمیں ووٹ د ینا ہے تعلیم صحت اور پا کستا ن کی خو شحا لی کو پا کستا ن کے رو شن مستقبل کو ا خلا ق کے گر ے نا منا سب جملے اور حملے منا سب نہیں ر نگ نسل بر د ا ر ی لسا ن سے بلند ہو کر نظر یا ت کی سیا ست کر یں ا یک دو سرے کا ا حتر ا م کر یں ہمیں ا پنے ا ندر اور معا شر ے میں روا دری کو عا م کر نا چا ہیے ا لیکشن آئے ہیں اور چلے جا ئیں گے لیکن آپس کی محبتیں اور دو ستیا ں قا ئم ر ہنی چاہییا پنے ضمیر کی آ وا ز کو سنیں اور ووٹ کا سٹ کر یں ا خلا قیا ت کا خیا ل ر کھنا چا ہیے نا منا سب جملے اور غیر مہذب ا لقا با ت سے ا جتنا ب کر یں ا سلا م ہمیں مسلما نو ں کی عز ت کا در س دیتا ہے آزا د ا مید با ر ز یا دہ لو گ جیپ پہ سو ا ر نظر آ تے ہیں یہ حسن ا تفا ق ہے یا ا ن کا ا تفا ق ہے یہ بھی ہو سکتا ہے حسب سا بقہ ا ن لو گو ں کا جیپ کی و جہ سے حکو مت بنا نے میں ا ہم رو ل ہو ا بھی تو ا بتد ئے عشق ہے آ گے آ گے د یکھے ہو تا ہے عو ا م د یکھتے ہیں کیا کر تی ہے سیا سی سا ئنس دا نو ں ا لیکٹیبلزکو دو با ر ہ منتخب کر تی ہے یا وا قعی تبد یلی لا تی ہے پچیس جو لا ئی کو پتہ چلے گاملک پا کستا ن کہا ں کھڑا ہے کو ن سی جما عت حکو مت بنا تی اور کو ن سے جما عت ا پو ز یشن میں ہو گی ۔۔۔۔ 

Readers Comments (0)




Free WordPress Themes

WordPress Blog