پنجاب کا سالانہ بجٹ 15 جون کو پیش کرنے کا اعلان   


کو شائع کی گئی۔ June 12, 2020    ·(TOTAL VIEWS 58)      No Comments

لاہور: (یواین پی) پنجاب کا سالانہ بجٹ 15 جون کو پیش کرنے کا اعلان، پنجاب حکومت نے 15جون کو بجٹ پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم جواں بخت بجٹ پیش کریں گے جبکہ مالی سال 21-2020 کے بجٹ کا مجموعی تخمینہ 2400 ارب لگایا گیا ہے۔ ترقیاتی بجٹ میں 50 سے 60 فیصد کمی کی جاسکتی ہے۔ پنجاب کا ترقیاتی بجٹ کمی کے بعد 250 ارب رکھے جانے کا امکان ہے، زرعی آمدن پر انکم ٹیکس بڑھانے کی تجویز بھی ہے، زرعی شعبہ میں 6 لاکھ روپے تک کوئی انکم ٹیکس نہیں ہوگا، 12 سے 18 لاکھ روپے آمدن والے کسان سے 30 ہزار روپے اور پلس 10 فیصد ٹیکس لیا جائے گا۔18 تا 25 لاکھ آمدن والے کسان سے90 ہزارروپے پلس ساڑھے 12 فیصد ٹیکس لینےکی تجویز بھی زیرِ غور ہے۔پنجاب حکومت کو آئندہ مالی سال کے بجٹ کے حتمی اہداف طے کرنے میں شدید مشکلات کا سامنا ہے ،تنخواہوں میں اضافے کی صورت میں صوبائی بجٹ پر 68 ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا،کورونا وائرس کی وبا ء سے نمٹنے کے لئے کم از کم 13 ارب روپے خصوصی طور پر مختص کئے جانے کا امکان ہے۔ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ پنجاب کو وفاقی محاصل سے کتنا شیئر ملے گا وفاق نے ابھی تک کچھ واضح نہیں کیا،سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں اضافے سے متعلق بھی ابھی تک آگاہ نہیں کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت نے تنخواہوں کی مد میں 337 ارب روپے کی رقم کو منجمد کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے،تنخواہوں میں اضافے کی صورت میں صوبائی بجٹ پر 68 ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا۔

Readers Comments (0)




Weboy

WordPress Blog