کشمیر میں بھا ر تی مظا لم   


کو شائع کی گئی۔ February 3, 2020    ·(TOTAL VIEWS 95)      No Comments

تحر یر ۔۔۔ ڈا کٹر عبد ا لمجید چو ہدر ی
بھا ر ت نے سیکولر ا زم کا لبا دہ د نیا کو د ھو کے میں ر کھنے کے لئے ا و ڑ ھ ر کھا ہے و گر نہ ہند و ستا ن میں سیکو لز ا زم کا مطلب ہے مسلما نو ں کی مذ ہبی آ ز ا د ی پر قد غن لگا نا سیکو لر ا ز م بھا ر ت میں ہند و ﺅ ں کے لئے ا لگ قا نو ن اور د یگر مذہبی ا قلیتوں مسلما نو ں اور عیسا ئیوں کے لئے ا لگ ضا بطے ہیں بھا ر ت پر بی جے پی نہیں آرایس ایس کی حکو مت قا ئم ہے جس کی درجنو ں ذیلی فر قہ پر ست تنظیمیں ہندو تو ا کے نظر یے کو قا ئم کر نے کے لئے سر گر م عمل ہیں مقبوضہ کشمیر کی صو ر ت حا ل بگڑ تی جا ر ہی ہے بین ا لاقوامی کو ششو ںسے ا یک عشر ہ پہلے تک مقبو ضہ کشمیر میں ا ن گر و پو ں کی حو صلہ ا فزا ئی کی جا تی ر ہی ہے جو تنا ز ع کشمیر کو مذا کر ا ت کے ذر یعے حل کر نا چا ہتے ہیں آج سلگتی مقبو ضہ وا دی میں بھا ر تی تشددکے با عث شہید ہو نے والا ہر نو جو ا ن پا کستا نی پر چم میں د فنا ہو ر ہا ہے بھا ر ت کی جا نب سے مقبو ضہ کشمیر میں فو جی د ستو ں کی تعد ا د بڑ ھا نے کشمیر کی آ ئینی حیثیت تبدیل کر تے و قت کشمیر یو ں سے ر ا ئے نہ لینے اور ا ہل کشمیر پر متو ا تر بند و ق تا نے ر کھنے کی و جہ سے با ت چیت کے حا می کمز و ر ہو نے لگے ہیں ا س کشید ہ اور ظا لما نہ فضا میں ا یک با ر پھر بزوربندو ق آزادکر ا نے کی سو چ تقو یت پکڑ ر ہی ہے جس سلگتی وادی میں ہر گھر سے لا شیں ا ٹھ رہی ہو ں ا ن کو سمجھا نا بہت مشکل ہے کہ و ہ عا لمی طا قتو ں کی مد ا خلت تک صبر کا مظا ہر ہ کر یں آ ج کشمیر ی با شند ے اس جا بر ا نہ ما حو ل کا خا تمہ چا ہتے ہیں کشمیر کے طو ل عر ض میں ان ر ہنما ﺅ ں کو یا د کیا جا تا ہے جنہوں نے آ ذا دی کے چر ا غ روشن ر کھنے کے لئے مز ا حمت کی اور ا پنی جا ن و طن پہ قر با ن کر د ی کشمیر کی وادی کے لو گ سکھو ں ڈوگر ہ اور پھر بھا ر تی تسلط کے خا تمہ کے لئے لڑ تے صد یا ں ہو گئی ہیں ا ن کی کئی نسلیں و طن کی آ زادی کی تحر یک میں جا ن د یتی آ ئی ہیں جس قو م کی جا ن ما ل عز ت و آ بر و کو خطر ہ ہوتو ا س کو قد ر تی طو ر پر ا پنے د فا ع کاحق مل جا تا ہے بھا ر ت نے جس طر ح ظلم و جبر سے کشمیر یو ں کو ا ن کے بنیا دی حقو ق سے محر و م کر ر کھا ہے اور ا ن پر جبر اور ظلم مسلط کر ر کھا ہے ا س ظلم و جبر کی صو ر ت حا ل میں کشمیر ی با شندو ں کو ا پنے و طن کو ظلم و جبر سے نجا ت د لا نے کے لئے حق حا صل ہے کہ کشمیر ی با شند ے د نیاکے کسی بھی علا قے سے تر بیت اور ما لی و سا ئل حا صل کر کے جہا د کا ا علا ن کر د یں ا قو ا م متحد ہ مقبوضہ کشمیر میں ا نسا نی حقو ق کی پا ما لی پر تشو یشکا ا ظہا ر کر چکا ہے لیکن عملی ا قدا م سے دور ہے بھار تی ا قدا ما ت جبر و ظلم سے تنا ز ع کشمیر کا پر ا من کی ا مید د م تو ڑ ر ہی ہے جنگ تنا ز عا ت کا حل نہیں اور جنگ شر و ع کر نا تو ا نسا ن کے بس میں لیکن ختم کب ہو گی اس کا کسی کو کو ئی پتہ نہیں بھا ر ت کی ہٹ د ھر می کی و جہ سے پو ر ا بر صغیر آ گ کے قر یب ہے بھا ر ت کی ا نسا نی حقو ق کی پا ما لی ظلم و جبر کی و جہ سے کشمیر میں یہ سو چ فر و غ پا ر ہی ہے کہ آ زا د ی کے لئے ا ب ظلم و جبر کےسے نجا ت کے لئے بھر پو ر مزا حمت کر نا ہو گی ا گر کشمیر ی نو جوان ا پنے حقو ق کے لئے ہتھیار ا ٹھا لیتے ہیں تو بھا رت کے ظلم و جبر کی و جہ سے بھا ر ت کشمیر ہی نہیں پنجا ب کے کچھ بہت ا ہمیت کے حا مل علا قو ں سمیت بہت کچھ کھو دے گا ا قوا م عا لم ا گر صر ف سا بقہ بیا نا ت کی طر ح ہی صر ف بیا نا ت تک ہی محد و د ر ہی تو و ہ و قت دور نہیں جب کشمیر کے نو جوان بھا ر ت کو کشمیر سے د ھکیل دیں کیا ظلم بھا ر تی فو ج ا ب کشمیر یو ں کو کنٹر و ل کر سکے گی ا ب بھا ر تی فو ج کو کے لئے کشمیر یو ں کو کنٹر و ل کر نا نا ممکن ہو گا کشمیر یو ں نے ا پنی جد و جہد نہا یت کٹھن اور ظلم وجبر میں جا ر ی ر کھی ظلم اور جبر کی رات اس مقا م تک پہنچ چکی ہے کہ کشمیر یو ں کو ان کے گھر وں میں قید کر دیا گیا ہے بچو ں کے لئے دودھ نہیں مر یضو ں کے لئے دو ا ئی ہیں لو گو ں کو بو لنے کی آ زا دی نہیں کشمیر ی ا پنے پیا رو ں سے را بط نہیں کر سکتے ا س و قت کشمیر بھا ر ت اور د نیا سے کٹ کر نا زی کیمپ بن چکا ہے یہ ظلم و جبر صر ف کشمیر ی حر یت پسندو ں سے روا نہیں ر کھا جا ر ہا بلکہ بھا ر ت کے کی پا لیسیو ں کے حا می ر ہے ہیں وہ کشمیر ی بھی ا ن کا شکا ر ہیں بھا ر تی ظلم و جبر عز ت و آ بر و ا نسا نی حقو ق کی پا ما لیو ں نے حا لا ت ا س نہج پر پہنچ چکے ہیں جہا ں سے وا پسی کا را ستہ نہیں بچتا اور نہ وہ سر نڈ کر سکتے ہیں بھا ر ت ا پنے غا صبا نہ قبضے کے لئے ا نسا نی حقو ق بد تر ین خلا ف و ر ز یا ں کر ر ہا ہے بھا ر ت کشمیر میں طا قت کے ذریعے ز یا دہ دیر تک قا بض نہیں ر ہ سکتا کشمیر ی آزادی سے کم کسی سمجھو تہ کے لئے تیا ر نہیں مو دی سر کا ر نے علا قا ئی ا من پر ا پنی د ا خلی سیا ست کو کو تر جیح د ی عا لمی بر ا دری بھا ر ت کا ہا تھ رو کے اور ا سے مذ ا کر ا ت پر مجبو ر کر ے عا لمی بر ا دری کے ا کثر حلقے ہند و ستا ن کی جا نب سے کشمیر یو ں کی منظم نسل کشی سے آ گاہ ہیں مگر چشم پو شی سے کا م لے ر ہے ہیں عا لمی بر ادری نے کشمیر میں بھا ر تی مظا لم پر چپ سا د ھ ر کھی ہے پا کستا ن نے بھا ر ت سے تعلقا ت میں کشید گی اور کنٹر و ل لا ئن پر تنا ﺅ کے با وجو د کر تا ر پو ر ر ہداری کی بر و قت تکمیل کی پا کستا ن روز ا و ل سے تما م ہمسا یہ مما لک سے با ہمی ا حتر ا م اور مسا وا ت کی بنیا د پر ا من تعلقا ت کا حا می ہے بد قسمتی سے بھا ر تی حکمر ا نو ں کی خطہ میں با لا د ستی کی خو ا ہش کے سبب بر صغیر کے تما م مما لک کے بھا ر ت سے ا ختلا فا ت ہیں بھا ر ت کی ہٹ د ھر می اور ظلم کی و جہ سے جنگ کے با د ل پا کستا نی سر حد و ں پر منڈلا ر ہے ہیں اور کشمیر ا ب ا یک ایسی سلگتی وا دی ہے جس کی آ گ میں بھارت جل جا ئے گا مقبو ضہ جمو ں و کشمیر کے مسلما ن ا پنی جا نو ںپر کھیل کر پا کستا نی پر چم ہا تھو ں میں ا ٹھا کر اور سینو ں پر گو لیا ں کھا کر ظلم بھا ر تی فو ج کے سا منے سینہ سپر ہیں اور بڑ ھتا ہی جا ر ہا ہے یہ ذو ق جنو ں ہر سزا کے بعد ا ہل کشمیر کے حو صلے و قت کے سا تھ بڑ ھتے چلے گئے یو ں تو ہر ا نتہا پسند ہندو جما عت غیرہندوﺅ ںکی د شمن ہے مگر مسلما نو ں ہر ا ن کی عنا یا ت کیچھ زیا دہ ہیں بھا ر ت کا معا شر ہ اب بھی ا نتہا پسند ی ذات پا ت تعصب اور درجہ بندی کے ہزا روں سا ل پر ا نے نظر یا ت پر قا ئم ہے بھا ر ت کی بڑھتی ہو ئی د ہشت گر د ی ا نتہا پسند ی اور مذ ہبی جنو نیت کی وجہ سے بھا ر ت تقسیم ہو سکتا ہے

Readers Comments (0)




WordPress主题

WordPress Blog