یوکرین بحران کے حل کے لئے چین اور برازیل کی طرف سے پیش کردہ اتفاق رائے کی حمایت اور شمولیت کے لئے مزید ممالک کا خیرمقدم کرتے ہیں، چینی مندوب

Published on June 9, 2024 by    ·(TOTAL VIEWS 16)      No Comments

اقوام متحدہ (یوا ین پی) اقوام متحدہ میں چین کے نائب مستقل مندوب گنگ شوانگ نے کہا ہے کہ یوکرین کے بحران کے سیاسی حل پر چین اور برازیل کی طرف سے پیش کردہ اتفاق رائے سب سے بڑا نقطہ نظر ہ ہے جو بین الاقوامی برادری یوکرین کے بحران کے بارے میں تشکیل دے سکتی ہے ، اور چین اتفاق رائے کی حمایت اور شمولیت کے لئے مزید ممالک کا خیرمقدم کرتا ہے۔ گنگ شوانگ نے یوکرین کے معاملے پر سلامتی کونسل کے اجلاس میں تقریر کرتے ہوئے کہا کہ چین یوکرین کے بحران کا خالق یا شراکت دار نہیں ہے۔ تنازعہ کے آغاز کے بعد سے ، چین ہمیشہ امن مذاکرات کو فروغ دینے اور یوکرین کے بحران کے سیاسی حل کے لئے مثبت کوششیں کرتا چلا آ رہا ہے۔ کچھ عرصہ قبل چین اور برازیل نے مشترکہ طور پر یوکرین کے بحران پر “چھ نکاتی اتفاق رائے” جاری کیا تھا، جس میں اس بات پر زور دیا گیا تھا کہ مذاکرات اور مذاکرات ہی بحران کو حل کرنے کا واحد راستہ ہے، جس میں تمام فریقوں پر زور دیا گیا ہے کہ وہ کشیدگی میں کمی کو فروغ دینے کے لئے مل کر کام کریں، اور تمام فریقین سے انسانی امداد بڑھانے، جوہری ہتھیاروں کے استعمال کی مخالفت کرنے، جوہری بجلی گھروں پر حملوں کی مخالفت کرنے اور عالمی صنعتی اور سپلائی چین کے استحکام کو برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا گیا .چینی نمائندے نے مزید کہا کہ یوکرین کے اول نائب وزیر خارجہ نے حال ہی میں چین کا دورہ کیا ہے، جس کے دوران دونوں فریقوں نے یوکرین کے مسئلے پر گہری بات چیت کی، اور چینی فریق نے یوکرین کو “چھ نکاتی اتفاق رائے” پر بھی تفصیلی بریفنگ دی۔ چین کا ماننا ہے کہ چھ نکاتی اتفاق رائے زیادہ تر ممالک کی مشترکہ امنگوں پر پورا اترتا ہے اور یوکرین کے بحران کے بارے میں بین الاقوامی برادری کی طرف سے تشکیل دیا جانے والا سب سے بڑا مشترکہ نقطہ نظر ہے۔ چین چھ نکاتی اتفاق رائے کی حمایت اور شمولیت، سیاسی تصفیے کی مثبت رفتار کو بتدریج وسعت دینے اور امن کے امکانات کو روشن بنانے کے لئے مزید ممالک کا خیرمقدم کرتا ہے۔

Readers Comments (0)




Premium WordPress Themes

Free WordPress Theme