مجھے معاف کر میرے ہم سفر

Published on April 21, 2018 by    ·(TOTAL VIEWS 816)      No Comments

مجھے معاف کر میرے ہم سفر
تجھے چاہنا میری بھول تھی
انہی راستوں پر اک نظر
تجھے دیکھنا میری بھول تھی
کبھی رات سے کبھی شام سے
کبھی اپنے دل کی آواز سے
کبھی مالکِ دوجہان سے 
تجھے مانگنا میری بھول تھی
تنہا تنہا رات بھر 
تجھے سوچتے ہی رہے مگر
نا سمجھ سکا یہ دل میرا
یہ تڑپنا میری بھول تھی
میرے پاس اپنا تو کچھ نہیں
کچھ تیری یادوں کے سوا
تو نہیں تیرا پیار نہیں
یہ تمنا میری بھول تھی
تیری یاد آئی تو رودیا
تجھے مل گیا تجھے کھو دیا
مجھے دکھ بس اتنا ہوا
یوں سسکنا میری بھول تھی
سعدیہ انعم

Readers Comments (0)




Free WordPress Themes

WordPress Blog