چینی کمپنی نے پاکستان کو پچاس ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ناقابل یقین پیشکش کردی

Published on July 3, 2015 by    ·(TOTAL VIEWS 520)      No Comments

abcبیجنگ (یو این پی) پاکستان کے مخلص دوست چین نے پاک چین اقتصادی راہداری کے منصوبے کیلئے 46 ارب ڈالر (تقریباً 46 کھرب پاکستانی روپے) کی بھاری سرمایہ کاری کا اعلان کیا تو ساری دنیا میں اس اقدام کے چرچے ہوگئے، لیکن آپ کو یہ جان کر بیک وقت حیرت اور خوشی ہوگی کہ اب چین کی طرف سے پاکستان کے توانائی سیکٹر میں اس سے بھی بڑی سرمایہ کاری کی پیشکش کردی گئی ہے۔
ذرائع کے مطابق دنیا کے سب سے بڑے ہائیڈروالیکٹرک ڈیم کی مالک چینی سرکاری کمپنی سی ٹی جی نے پاکستان میں پن بجلی کے منصوبوں کیلئے 50 ارب ڈالر (تقریباً 50 کھرب پاکستانی روپے) کے فنانسگ کنسورشیم میں شمولیت پر رضامندی ظاہر کردی ہے۔ چینی کمپنی نے ورلڈ بینک کے ذیلی ادارے انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن کے ساتھ مل کر پاکستانی پراجیکٹس کو فنڈز فراہم کرنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔ یہ فیصلہ 18 جون کو کیبنٹ کمیٹی برائے توانائی کی ایک میٹنگ میں کیا گیا، اور یہ پیشکش اس سے پہلے پاک چین اقتصادی راہداری میں کی جانے والی 46 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کے علاوہ ہے۔ اگر یہ پیشکش عملی شکل اختیار کرگئی تو چین پاکستان کی تاریخ میں سب سے بڑی سرمایہ کاری کرنے والا ملک بن جائے گا۔ حکومت پاکستان جن اہم منصوبوں میں چینی سرمایہ کاری کی خواہاں ہے ان میں 4500 میگا واٹ کا دیامر بھاشاڈیم اور 969 میگا واٹ کا نیلم جہلم پاور پراجیکٹ بھی شامل ہیں۔ چینی کمپنی سی ٹی جی توانائی کے شعبے میں نمایاں مقام رکھتی ہے اور یہ کمپنی دنیا کے سب سے بڑے ہائیڈروالیکٹرک پاور پلانٹ کی مالک اور آپریٹر ہے۔ اس کمپنی کے صرف ایک پراجیکٹ تھری گورجیز ڈیم پاور پلانٹ کی صلاحیت 22,500 میگا واٹ ہے، جو کہ پاکستان کی بجلی کی مجموعی انسٹالڈ کیپسٹی 23500 میگاواٹ کے تقریباً برابر ہے۔

Readers Comments (0)




WordPress主题

Premium WordPress Themes